ٹیکنالوجی دلچسپ

آپ فیس بک کی آمدنی کا ذریعہ، جانئیے دلچسپ حقائق

فیس بک کے صارفین بخوبی آگاہ ہو گے کہ انہیں نیوز فیڈ میں صرف کسی فرینڈ یا پھر کسی پیج کی ہی پوسٹس نہیں نظر آتی بلکہ انھیں کچھ نئی پوسٹس بھی نظر آتی ہیں اشتہار کی صورت میں. اور اس سے بھی زیادہ کمال کی بات یہ ہے کے یہ اشتہارات بلکل آپ کے دلچسپی اور مزاج کے مطابق ہوتے ہیں.

شائد کے کبھی آپ کا ذاتی تجربہ رہا ہو کہ آپ کچھ سرچ کر رہے ہو یا کسی سے اس حوالے سے بات کر رہے ہو یا آپ کی اتفاقاً کسی انسان سے ملاقات ہوتی ہے تو فیس بک آپ کو یہ آپ کی پروفائل پر ظاہر کرنا شروع کر دیتا ہے.

اس آرٹیکل میں آپ جان پائیں گے کہ فیس بک کے صارفین فیس بک کے لئے آمدنی کا ذریعہ کیسے بنتے ہیں اور فیس بک آپ کو کن بنیادوں پر اشتہارات دکھاتا ہے اور کس طرح آپ کے پروفائل اور کی جانے والی سرگرمیوں کو ہدف بناتا ہے.

ہمارے معاشرے میں زیادہ تر افراد روز مرہ کے معمول میں ٹی وی ضرور دیکھتے ہیں، دوران پروگرام ہم اشتہارات دیکھتے ہیں جو کے ہمیں بلکل بھی پسند نہیں ہوتے. شائد اس وجہ یہ ہوتی ہے کہ یہ ہمارے پسندیدہ پروگرامز کے درمیان ایک ہڈی کی طرح ہوتے ہیں.

روائتی اشتہار بمقابلہ سوشل میڈیا

سوچیں ذرا، پروگرام آپ ایک تسلسل کے ساتھ دیکھ رہے ہو, جیسے ہی آپ کہ اضطراب بڑھتا ہے تو ساتھ ہی ایک اشتہار چلا دیا جاتا ہے، اس طرح آپ کے مزاج کی روانی اور دلچسپی اس اشتہار کا شکار بن جاتی ہے. تاہم یہاں پر یہ بھی وضاحت کرتا جاؤں کہ ٹی وی چنیلز اشتہار کی مد میں اپنے اخراجات پورے کرتے ہیں. ٹی وی چنیلز کو اس بات سے فرق نہیں پڑتا ناظرین شو یا پروگرام میں کتنی دلچسپی رکھتے ہیں. چنیلز کو کوشش صرف یہ ہوتی ہے کہ ان کو کون سا شو یا ڈرامہ زیادہ مہنگے ایڈز دلوا سکتا ہے.

اب ہم بات کرتے ہے سوشل میڈیا کی جس کا معاملہ ٹی وی چنیلز سے خاصا مختلف ہوتا ہے. ہم جانتے ہیں کہ فیس بک مقبول ترین سوشل میڈیا نیٹ ورک ہے. مقبول ہونے کے باوجود بھی فیس بک بھی اپنے صارفین کے معاملے میں عدم تحفظ محسوس کرتا ہے. فیس بک چاہتا ہے کہ اس کے صارفین ہمیشہ فیس بک میں دلچسپی رکھیں اور اس کو قائم رکھنے کے لئے فیس بک بہت پاپڑ بیلنے پڑتے ہیں.

آپ سوشل میڈیا کا ہدف اور آمدنی کا ذریعہ کیسے

اس وجہ سے فیس بک آپ کے پروفائل کے ڈیٹا کو اپنے انتہائی طاقتور کمپیوٹرز کے ذریعے پراسیس کرتا رہتا ہے. یہ کمپیوٹرز آپ کی فیس بک پر کی جانے والی سرگرمیوں کو پراسیس کر کے آپ کے فرینڈ لسٹ میں شامل افراد اور ایسی پوسٹس ظاہر کرتے ہیں جو آپ کے مزاج اور دلچسپی کے مطابق ہوتے ہیں. اس طرح سے آپ کا اعتماد فیس بک پر قائم رہتا ہے. یقین مانیے فیس بک سچ میں اس معملے میں ماسٹر ہے.

حالیہ رپورٹ کے مطابق تقریباً 2 ارب لوگ ماہانہ فیس بک کو استعمال کرتے ہیں اور ان میں سے 1.5 ارب ایسے افراد ہے جو روزانہ کی بنیاد پر فیس بک کو استعمال کرتے ہیں. ذرا سوچئے، اس قدر بڑی ویب سائٹ کو منظم رکھنے کے لئے آپ کو کثیر تعداد میں سٹاف، بیشمار کمپیوٹرز اور ساتھ ہی ایکسپرٹ سافٹ ویئر انجینئرز درکار ہیں. اور آخر میں ان تمام اخراجات کو پورا کرتے ہوئے آپ کو منافع بھی حاصل کرنا ہے. یہ سب فیس بک کرتا ہے آپ کو اشتہارات دکھا کر. شاید آپ یہ پڑھ کر چونک گئے ہو گے کیونکہ آپ کو کبھی اس بات کا احساس نہیں ہوا ہو گا، جی ہاں فیس بک یہ کام انتہائی احسن طریقے سے سر انجام دیتا ہے.

یہ بات حقیقت ہے کہ اشتہارات صارفین کو عدم دلچسپی کہ شکار کر دیتے ہے. صارفین نہیں چاہتے کو وہ بلا وجہ اشتہارات دیکھیں، مگر سوشل میڈیا پر اشتہارات نہیں تو ہم انہیں فری استعمال نہیں کر سکتے. اس معاملے کو بخوبی سر انجام دینے کے لئے فیس بک نے فیصلہ کیا کیوں نہ اشتہارات کو بھی صارفین کی دلسچسپی کی بنا پر ان کے پروفائل پر ظاہر کیا جائے. یعنی کہ صارفین کو وہی اشتہارات دکھائیں جائے جن میں وہ دلچسپی رکھتا ہے.

مثال کے طور پر اگر آپ کو کرکٹ میں دلچسپی ہے تو آپ کو سوشل میڈیا پر بیٹس یا کرکٹ اکیڈمی کے اشتہارات دکھائیں جائیں گے نہ کے کسی گاڑی کی کمپنی کے. کیونکہ یہ ممکن ہے اگر آپ کو مزاج سے ہٹ کر اشتہارات دکھائیں جائیں تو ممکن ہے آپ کسی اور سوشل نیٹ ورک کو استعمال کرنا شروع کر دیں, اور فیس بک یہ قطعا نہیں چاہتا. فیس بک اپنے طاقتور کمپیوٹرز کی مدد سے آپ کی انجام دی جانے والی ہر سرگرمی پر نظر رکھتا ہے. آپ کو کون پسند ہے یا کون ناپسند ہے. آپ کی تمام سرچز کو پراسیس کرتا ہے اور آپ کو انہی کے حوالے سے اشتہارات دکھاتا ہے.

سوشل میڈیا پر ایڈور ٹائیزر آپ کو کیسے ہدف بنایا جاتا ہے

سوشل میڈیا آپ کو آپ جگرافیائی لہٰذ سے بھی ٹارگٹ کرتا ہے جو کے قابل تعریف ہے. مثال کے طور پر اگر آپ کی کیک کی بیکری ہے اسلام آباد میں تو آپ چاہیں گے کے صرف اسلام آباد کے لوگ بیکری کا اشتہار دیکھے. صرف اتنا ہی نہی, سوشل میڈیا صارفین کو جنس اور زبان کے بنا پر بھی اشتہارات دکھاتا ہے. ایسا کبھی نہیں ہو گا مرد حضرت کو لپ سٹک یا جیولری کے اشتہارات دکھاۓ جا رہے ہو. دبئی میں جب PSL منعقد ہوتا ہے تو اشتہارات صرف اردو اور ہندی میں دکھائیں جا رہے ہوتے ہے کیونکہ عرب کرکٹ کے شائقین نہیں ہیں. ایڈور ٹائیزر جنس، زبان، جغرافیائی اور مزید فیچرز کی مدد سے اپنی پراڈکٹ کی تشہیر بآسانی صارفین تک پہنچا سکتے ہیں.

ایک فیس بک ایڈور ٹائیزر کا ذاتی تجربہ

دوران انٹرویو ایک فیس بک ایڈور ٹائیزر نے انکشاف کیا کہ ایک کالج انتظامیہ کی جانب سے پروجیکٹ ملا جس میں ایسے والدین کو ٹارگٹ بنانا تھا جن کہ بچے حال ہی میں میٹرک پاس کر چکے ہو. یعنی وو کسی اچھے کالج کے تلاش میں ہو. اس طرح یہ پراجیکٹ سچ میں کامیاب رہا. بلکل اسی طرح ڈائپر کمپنیز ایسے والدین کو اپنا ہدف بناتی ہے جن کے بچے 1 سے 5 سال کے درمیان ہو.

مزید دلچسپ آرٹیکلز پڑھیں

Facebook Comments
Close