دلچسپ

حنا ڈائجسٹ اگست 2018

Hina Digest August 2018 میں جب بھٹو نے اسپین کا دورہ کیا تو وہاں ان کی ملاقات منیر احمد خان سے ہوی، منیر احمد خان نے دوران ملاقات بھٹو صاھب پر انکشاف کیا کہ ہندوستان ایٹم بم بنانے میں مصروف ہے.

انہوں نے بھٹو صاھب کو آگاہ کیا تقریبا 150 کروڑ (یہ مالیت اس وقت کے لحاظ سے تھی) میں پاکستان نیوکلیئر ہتھیار تیار کر سکتا ہے. دورہ سے واپسی پر بھٹو نے اس وقت کے صدر ایوب خان سے بیان کیا لیکن ایوب خان نے یہ کہہ کر مسترد کر دیا پاکستان ایک غریب ملک ہے، ہمارے پاس اتنے وسائل نہیں ہے.

Read Online Hina Digest August 2018

بعد ازاں 1971 کی جنگ میں پاکستان کو نا قابل تلافی نقصان نے ایٹم بم کے بارے میں سوچنے کے لئے مجبور کر دیا. ملتان میں بھٹو نے میٹنگ بلی جس میں سائنس دان ڈوکٹرو عبدل سلام نے بریفنگ دی. اس کی وجہ سے پاکستان کہ نیوکلیئر پروگرام کا ایک بار پھر سے آغاز ہوا.

Download PDF Hina Digest August 2018


 Download  

انڈیا کہ نیوکلیئر پروگرام 1967 میں شروع ہو چکا تھا. اس کے علاوہ بھی انڈیا کی عسکری قوت کے سامنے پاکستان کمزور تھا. اس طرح انڈیا کا نیوکلیئر پروگرام پاکستان کے لئے ایک خطرے سے کم نہیں تھا. 1974 میں انڈیا نے پہلا جوہری ہتھیار ٹیسٹ کیا.

پاکستان نے پہلے کوشش کی کہ جنوبی ایشیا میں جوہری ہتھیار کی ریس نہ ہو اور یہ خطہ جوہری ہتھیاروں سے پاک رہے. تاہم انڈیا نے یہ تمام تر کوشش رد کر دی. اس لئے پاکستان کو بھی مجبورا جوہری پروگرام کا آغاز کرنا پڑا.

سسپنس ڈائجسٹ اگست 2018

ذولفقار بھٹو نے تاریخی جملے کہے
اگر انڈیا بم بنا لیتا ہے تو ہم گھاس ور پتے ہزاروں سالوں تک کھا لیں گے، بھوکیں مر جائیں گے لیکن بم ضرور بنائیں گے. عیسایئوں کے جوہری ہتھیار ہے، یہودیوں کے پاس ہے اور اب ہندو بھی بم بنائیں گے تو مسلمان کیوں نہیں.

Facebook Comments
Close